Thursday , 21 June 2018
بریکنگ نیوز
Home » قارئین کے خطوط » قارئین کے خطوط
قارئین کے خطوط

قارئین کے خطوط

ْمکرمی ایڈیٹر ’’وقار ہند‘‘ السلام علیکم ،مزاج گرامی
’’کشمیریوں کے زخموں پر کون لگائے گا مرہم‘‘ مضمون بہت پسند آیا ۔ پلیٹ گن جس کی وجہ سے کئی نوجوان اپنی بصارت کھوچکے ہیں، اس کا خمیازہ ارباب اقتدار کو چکانا ہی پڑے گا۔ حکمرانوں کا ظلم اسی طرح جاری رہاتو پھر ہر گھر میں برہان وانی پیدا ہوں گے۔ وزیر اعظم مودی کو کشمیریوں سے بات چیت کرتے ہوئے وادی کے حالات کو بہتر بنانے کیلئے پہل کرنا ہوگا۔
عالم خان جالنوی ،اورنگ آباد
ایڈیٹر صاحب السلام علیکم
’’وقار ہند‘‘ تاخیر سے بہار پہونچ رہا ہے۔ کوشش کریں کہ ہرماہ کی 10 تاریخ تک یہ پسندیدہ میگزین بہار پہونچ جائے۔ ایسا کوئی نظم کریں کہ ہر ماہ کی 10 تاریخ سے قبل ’’وقار ہند‘‘ کی ترسیل ہوجاے اور یہاں، قارئین کے ہاتھوں میں فیملی میگزین ’’وقار ہند‘‘ ہو۔ ماہ جولائی کا اداریہ پڑھا، پسند آیا۔ سیاسیات کے مضامین کافی جانکاری اور معلوماتی ہیں ۔دلچسپ دُنیا بھی پسند آئی ۔
محمد عارش ملک،پٹنہ ۔بہار
مکرمی ایڈیٹر تسلیمات
امید ہے مزاج گرامی بخیر ہوگا ۔ الحمد للہ ماہنامہ ’’وقار ہند‘‘ چند سالوں سے ہمارا دلچسپ میگزین بن گیا ہے جس میں دین و دنیا کے ہر موضوع پر مضامین دستیاب ہیں۔ اگست کا شمارہ پسند آیا تمام مضامین دلچسپ رہے ۔ یہ میگزین ہر ماہ پابندی سے شائع کرنے پر آپ قابل مبارکباد ہیں۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ یہ میگزین مقبولیت کی بلندیوں کو پائے ۔
محمد اشرف علی ،پدا پلی کریم نگر
جناب محترم ایڈیٹر ’’وقار ہند‘‘۔ تسلیمات
’’وقار ہند‘‘ کا الحج 2016 وصول ہوا ۔ سرورق پُرنور اور روح پرور تھا اور اس کوکافی دیدہ زیب پایا ۔ مضامین اچھے لگے۔ حج سے متعلق مضامین کو مثالی اور معلوماتی پایا۔ سیاسی مضامین بھی پسندآئے ۔ خصوصی رپورٹ کو بھی بہتر پایا۔ اداریہ اچھا لگا۔ سرمایہ ادب کے تحت مجتبیٰ حسین کے مضامین بہت بہت اچھے لگ رہے ہیں اس سلسلہ کو جاری رکھیں۔ تاریخ و سیاحت بھی پسندیدہ کالم رہا ہے۔ گھر کے جملہ افراد اس کالم کا مطالعہ کرتے ہیں۔دیگر گوشوں کے مضامین بھی زیر مطالعہ رہے۔
عبدالوہاب چھتری ناکہ حیدرآباد
مدیر ’’وقار ہند‘‘ السلام علیکم
ادارہ کے جملہ اسٹاف کو عید الفطر کی ڈھیر ساری مبارکباد جبکہ عید الضحیٰ کی پیشگی مبارکباد قبول فرمائیں۔ ’’وقار ہند‘‘ کا نیا شمارہ اچھا لگا ۔ اسلامیات کے مضامین پسندیدہ اور معلوماتی رہے ۔ نسواں کے مضامین ہمیشہ سے پند و نصیحت لئے رہتے ہیں۔ قندیل بلوچ پر مبنی مضمون بھی بہتر رہا ۔ ’’وقار ہند‘‘ کے دیگر گوشوں کے مضامین اچھے لگے ۔ اللہ سے دعا گو رہوں گا کہ وہ اس فیملی میگزین کو مزید استحکام عطا کریں۔
عبدالرسول خان ،کارخانہ سکندرآباد
ڈیئر ایڈیٹر آداب
’’وقار ہند‘‘ کا تازہ شمارہ ایک بار پھر باصرہ نواز ہوا ۔ مشمولات کی ترتیب و پیشکش مثالی رہی۔ اداریہ خوب رہا۔ سیاسیات کے مضامین دل کوبھاگئے ۔ اسلامیات کے مضامین کو معلوماتی، دلچسپ پایا۔ گوشہ نسواں،بزم اطفال اور ادب کے مضامین مطالعہ کے قابل ہیں۔ ’’وقار ہند‘‘ کی عوامی مقبولیت میں اضافہ آپ کی محنت کا نتیجہ ہے ۔ مہنگائی کے اس دور میں اتنا معیاری میگزین کی اشاعت کا بیڑا اٹھانا جوئے شیر لانے کے مترادف ہے ۔ انشاء اللہ آپ کو اس کا صلہ ضرور ملے گا ۔سرمایہ ادب کے افسانے اچھے لگے ۔ مجتبیٰ حسین کے مضامین کی اشاعت کا سلسلہ جاری رکھنے کی ضرورت ہے۔ مسلم دُنیا اور عالم عرب بھی خوب ہے ۔ البتہ کیریئر کے گوشہ میں نئی جان ڈالنے کی ضرورت ہے ۔ یہ گوشہ، تقررات کے اعلانات تک محدود ہوکر رہ گیا ہے ۔ اس میں کامیاب افراد کے انٹرویو، آئی اے ایس ،آئی پی ایس ٹاپرس کے احساسات کو جگہ دی جانی چاہیئے ۔
عبدالصمد شاکر، ناندیڑ
جناب محترم ایڈیٹر آداب
’’وقار ہند‘‘کے دو شمارے پیش نگاہ رہ چکے ہیں ۔ جولائی اور اگست کے دو شمارے بالترتیب عید الفطر اور الحج نمبر تھے ۔ ان دو شماروں کے اداریہ سے لے کر قارئین کے خطوط تک حرفاً حرفاً پڑھا ۔ تمام مشمولات معیاری اور لائق مطالعہ ہیں ۔ مکتوبات کاگوشہ قارئین کے خطوط بھی ادب کا ہی جیسا حصہ ہے ۔تمام مضامین معلوماتی رہے ۔ دونوں شماروں کے سرورق دیدہ زیب اور روحانی منظر پیش کررہے تھے۔ عید الفطر شمارہ میں خلیفہ دوم حضرت عمر فاروقؓ پر مضمون سبق اور نصیحت آموز رہا ،پڑھ کر بے اختیار آنسو نکل پڑے ۔ عشرہ مبشرہ میں شامل حضرت عمر فاروقؓ کی سیرت و کردار آج کل کے مسلم سیاسی قائدین اور حکمراوں کیلئے ایک مشعل راہ سے کم نہیں ہیں۔ دُنیا کی نعمتیں تو عارضی ہیں اصل دولت تو آخرت میں ملنے والی ہے اس دولت کے حصول کیلئے دنیا میں خدا کوراضی کرنے اسے منانے کی اشد ضرورت رہتی ہے ۔ اللہ سے دعا ہے کہ ہم سب کو سیرت پاک حضرت محمد ﷺ اور ان کی تعلیمات پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائیں ۔
عظمیٰ مہمین،فلک نما حیدرآباد
ایڈیٹر ’’وقار ہند‘‘ السلام علیکم
امید ہے کہ بہ فضل تعالی خیرت سے ہوں گے ۔’’وقار ہند‘‘ کا نیاشمارہ بہ نام الحج باصرہ نواز ہوا ۔ اس فیملی میگزین کی دلکشی و تزئین کا ری قابل تحسین ہے ۔ شمارے کے تمام مضامین مسرت آمیز ،مفید ،معلوماتی او راپنی ایک الگ انفرادیت کے حامل ہیں ۔ زیر نظر یاہر شمارے میں کیرئیر کے گوشہ کو بلندی تک پہونچانے کے علاوہ مسلم مسائل پر مبنی مضامین کو زیادہ سے زیادہ جگہ دینی چاہئے ۔ اردو کی زبوں حالی کو دور کرنے ،اردو داں حضرات کے ضمیر کو جھنجھوڑ نے والے مضامین کو شامل میگزین کرنے کی ضرورت ہے ۔ امید ہے کہ آپ جناب والا اس جانب توجہ فرمائیں گے ۔
سید عبدالخالق،بیڑ مہاراشٹرا
جناب محترم مدیر ۔ السلام علیکم
’’وقار ہند‘‘ پابندی سے وصول ہورہا ہے ۔ پابندی اور تواتر کے ساتھ اس فیملی میگزین کی اشاعت یقیناً ایک اہم اور کامیاب کوشش ہے۔ میرا ذاتی تجربہ ہے کہ لوگ بے صبری سے تازہ شمارے کوکسی نہ کسی بھی طرح حاصل کرنے کی تگ و دو کرتے رہتے ہیں۔ اگست کے شمارے کی خصوصی رپورٹ پسند آئی ۔ یہ صحیح ہے کہ دنیا بھر کے مٹھی بھر نوجوان جویقیناًگمراہ ہوچکے ہیں جنت کے لالچ میں داعش میں شامل ہورہے ہیں۔ داعش دراصل یہود و نصاری کی پیداوار ہے ۔ اسلامی مفادات کو تباہ و تاراج کرنے ،مسلم حکمرانوں کو آپس میں لڑانے کیلئے امریکہ،برطانیہ اور اسرائیل نے داعش کی داغ بیل ڈال کر اس کو اسلامی نظریات کالبادہ اڑھادیا ۔ کم ظرف اور کم عقل چند مسلم نوجوان ،اس دہشت گرد اور غیر اسلامی تنظیم داعش کی جانب راغب ہورہے ہیں ملک میں اس تنظیم کو بڑھنے سے روکنے کیلئے ائمہ مساجد اور علماء کو میدان میں آنا ہوگا اور نوجوانوں کی ذہن سازی کرتے ہوئے انہیں دہشت گرد تنظیم داعش سے دور رکھنے کیلئے عملی اقدامات کیلئے میدان میں کودپڑنا ہوگا تب ہی ہم دنیا کو اس ناجائز تنظیم کے شر سے بچا پائیں گے ۔
سید ہلال احمد شکیل ،پربھنی
قارئین کرام آپ تمام کی حوصلہ افزائی کا شکریہ۔ انتہائی قلیل وقت میں آپ نے ہم سے جو رشتہ بنایا ہے وہ دن بہ دن مضبوط ہوتا جارہا ہے۔ا سی طرح اپنے خطوط کے ذریعہ ہمارا حوصلہ بڑھاتے رہیں اور ہماری خامیوں کی نشاندہی کرتے رہیں۔ انشاء اللہ آپ کے تعاون سے میگزین یقیناًاُردو کا وقار بنے گا۔ آپ میگزین کے مختلف موضوعات پر اپنی رائے سے ہمیں یوں ہی آگاہ کرتے رہیں۔ ادارہ

Comments

comments