Friday , 24 November 2017
بریکنگ نیوز
Home » انڈیا » حیدرآباد میں بنیں گی پلاسٹک کی سڑکیں
حیدرآباد میں بنیں گی پلاسٹک کی سڑکیں

حیدرآباد میں بنیں گی پلاسٹک کی سڑکیں

پلاسٹک کا استعمال روز مرہ زندگی میں عام بات ہے۔ بیٹھنے کی کر سی سے لے کر استعمال کے برتنوں تک سبھی کچھ پلاسٹک سے تیار کیا جارہا ہے۔ ایسے میں گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے شہر میں پلاسٹک کی سڑکیں تعمیر کرنے کے تجربے پر عمل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں دلچسپ بات یہ ہے کہ جو پلاسٹک سڑکوں پرپھینکا جائیگا اسی کو استعمال کرتے ہوئے یہ سڑکیں تعمیر کی جائیں گی ۔ پلاسٹک کو پہلے پالی بنڈ میں تبدیل کیا جائیگا پھر اس سے سڑکیں بنائی جائیں گی شہر میں روزآنہ3500 ٹن کچرا نکلتا ہے اس میں پلاسٹک کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے۔ جی ایچ ایم سی کے انجینئروں کو اس تجربے کا جایزہ لینے کا مشورہ دیا گیا ہے۔ جی ایچ ایم سی کمشنر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ2010 میں ایل بی نگر کے جی این ریڈی نگر کی این جی او کالونی میں پلاسٹک۔بیٹو میان سڑک ڈالی گئی تھی۔ بنگلور وکے ‘کے کے پلاسٹکس کے تعاون سے20 لاکھ روپے کی لاگت سے یہ سڑک تعمیر گئی تھی۔ حالیہ دنوں میں شدید بارش کی وجہ سے شہر کی کئی سڑکوں کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ موسم برسات میں بی ٹی سڑکوں کی خرابی سے راہگیروں کو شدید پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا اسلئے بلدیہ کی جانب سے پلاسٹک کی سڑکوں کا تجربہ کیا جارہا ہے۔پلاسٹک کی سڑکیں کافی کفایتی اور ماحول دوست ثابت ہورہی ہیں اس کے علاوہ یہ کافی دیرپا ہیں۔ بنگلور کی جس کمپنی کا تذکرہ کیا گیا ہے وہی کمپنی پلاسٹک کو پالی بنڈ میں تبدیل کر کے اس کی مدد سے سڑک تعمیر کرتی ہے اس طرح جی ایچ ایم سی کو دو فائدے ہورہے ہیں ایک شہر سے نکلنے والے پلاسٹک کے کچرے کو ٹھکانے لگانے کی پریشانی ختم ہوجاتی ہے اور دوسرے سڑکوں کی تعمیر کیلئے مہنگے میٹریل کی خریدی سے بچا جاسکتا ہے۔ پلاسٹک کو جلانے سے ماحولیاتی آلودگی کا خطرہ رہتا ہے۔ اس طرح پلاسٹک کے استعمال سے یہ خطرہ ختم ہوجائیگا۔عہدیداروں نے بتایا کہ اس طرح کی سڑکوں کا تجربہ صرف حیدرآباد میں ہی نہیں کیا جارہا ہے بلکہ دہلی‘ ممبئی‘بنگلور اور چینائی میں بھی کیا جارہا ہے اس طرح کی سڑکیں تعمیر کی جارہی ہیں۔پلاسٹک کو ڈامبر میں ملایا جاتا ہے اور اس سے سڑک بچھائی جاتی ہے۔ عام طریقے میں کنکریٹ میں ڈامبر ملا کر سڑک بناتے ہیں جس کو بی ٹی یعنی بیٹو میان سڑکیں کہا جاتا ہے۔ تا ہم اب اس میں پلاسٹک ملایا جائیگا یہ سڑک ہر طرح کے موسم میں بہتر رہے گی۔ عام طور پر پلاسٹک گرمی سے پگھلتا ہے۔ تا ہم گرما میں بھی اس سڑک کو کوئی نقصان نہیں ہوگا۔

Comments

comments