Friday , 24 November 2017
بریکنگ نیوز
Home » بین الاقوامی » خود روزگار پروگرام میں خواتین کی نمائندگی میں اضافہ
خود روزگار پروگرام میں خواتین کی نمائندگی میں اضافہ

خود روزگار پروگرام میں خواتین کی نمائندگی میں اضافہ

سعودی عرب میں جہاں ابھی تک خواتین کے کام کرنے کا تصور نہیں تھا لیکن اب یہاں بھی مختلف شعبوں میں خواتین نظر آرہی ہیں۔ تا ہم اچھی بات یہ ہے کہ ابھی تک مخلوط کام کرنے کا ماحول تیار نہیں ہوا ہے۔ ایک اطلاع کے مطابق2020تک خواتین کیلئے ایک لاکھ41ہزار ملازمتیں قائم کرنے کی تجویز ہے ۔توقع ہے کہ اس سے سعودی عرب میں خواتین ورکرس کا تناسب28فیصد ہوجائیگا۔سعودی عرب کے حکمراں خصوصاً ایسی خواتین کو خود روزگار سے وابستہ کرنا چاہتی ہے جو بے سہارا یا معذور ہیں۔اس پروگرام کا مقصد ایسی خواتین کو روزگار سے جوڑنا ہے جو شادی نہ ہونے کے سبب یا طلاق کی وجہ سے دشواریوں کا سامنا کررہی ہیں۔سعودی عرب میں بھی جہیز اگرچہ دلہے کی طرف سے دیا جاتا ہے تا ہم اچھی لڑکیوں کیلئے نقد رقم‘ کار فلیٹ کا مطالبہ عام ہوجانے کی وجہ سے کئی لڑکیاں ان بیاہی بیٹھی ہیں دوسری طرف سعودی عرب میں طلاق کی شرح میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ اس طرح خواتین کی ایک بڑی تعداد تنہائی کا شکار ہو کر سماجی مسائل پیدا کررہی ہے۔ سعودی حکومت نے ایسی خواتین کو خود روزگار سے جوڑنے کیلئے2020 تک ان کیلئے دیڑھ لاکھ ملازمتیں پیدا کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔

Comments

comments