Friday , 24 November 2017
بریکنگ نیوز
Home » گوشۂ نسواں » انجم آراء ملک کی دوسری مسلم خاتون آئی پی ایس
انجم آراء ملک کی دوسری مسلم خاتون آئی پی ایس

انجم آراء ملک کی دوسری مسلم خاتون آئی پی ایس

اگر آپ اپنے ارادوں میں پکے ہیں تو پھر کامیابی آپ کے قدم ضرور چومے گی۔کسی بھی مقصد کو پانے کیلئے جواں عزائم اور عزم و مصمم کے ساتھ سخت محنت بھی ناگزیر ہے۔ تن آسانی اور ہوائی قلعہ بنا لنے سے کچھ بھی حاصل ہونے والا نہیں ہے۔ ملک کی دوسری مسلم خاتون آئی پی ایس آفیسر کا اعزاز حاصل کرنے والی انجم آراء نے دختران ملت کو یہ مشورہ دیا ہے۔ان کا ماننا ہے کہ میرے والد محترم کی ہمت و حوصلہ افزائی کا نتیجہ ہے کہ آج وہ اس مقام پر فائز ہے۔ میرے والد ہمیشہ مجھ سے یہ کہتے تھے کہ بیٹا! تعلیم کی تکمیل کے بعد آپ کو آئی پی ایس آفیسر بننا ہے۔سخت محنت اور عزم و مصمم کی بدولت 2011 میں وہ‘ آئی پی ایس کیلئے منتخب ہوئیں۔تربیت اور دیگر امور کی تکمیل کے بعد انہیں شملہ میں ایس ایس پی کی ذمہ داری دی گئی۔ اس طرح انجم آراء کو سارہ رضوی کے بعد ملک کی دوسری مسلم خاتون آئی پی ایس آفیسر بننے کا اعزاز حاصل ہوا ہے۔ سارہ رضوی‘2008 میں آئی پی ایس کیلئے منتخب ہوئی تھیں۔ملک کی سب سے بڑی ریاست اُترپردیش کے اعظم گڑھ کے موضع کمہاریا کی رہنے والی انجم آراء کے والد محترم ایوب شیخ ہیں جوایک ملازم سرکاری رہے ہیں جبکہ والدہ محترمہ گرہست خاتون ہیں۔ سہارنپور سے ابتدائی تعلیم حاصل کرنیو الی انجم آراء نے ایچ آر انٹر کالج سے ہائر سکنڈری کا امتحان فرسٹ ڈیویژن سے کامیاب کیا۔ سال2011میں آئی پی ایس کیلئے منتخب ہونے سے قبل انہوں نے لکھنو میں انجینئرنگ کالج سے بی ٹیک کی سند حاصل کی۔ منی پور کیڈر کیلئے منتخب ہونے والی انجم نے یہاں چند دنوں تک کام کرنے کے بعد ان کا تبادلہ ہماچل پردیش کے صدر مقام شملہ کردیا گیا جہاں انہیں ایس ایس پی کی پوسٹنگ دی گئی تھی۔اسی شہر میں وہ شوہر اور بچوں کے ساتھ مقیم ہیں ان کے شوہر یونس ایک آئی اے ایس آفیسر ہیں۔ یونس وہی آفیسر ہیں جن پر مائننگ مافیا نے نالا گڑھ میں ٹریکٹر چڑھانے کی کوشش کی تھی۔مافیا کی اس سنگدلی کے باوجود‘یونس کے پایہ استقامت میں تعزلزل نہیں آیا وہ مافیا کے خلاف نکیل کسنے میں کامیاب رہے۔

Comments

comments