Tuesday , 21 November 2017
بریکنگ نیوز
Home » بزم اطفال » پانی میں تیل حل کیوں نہیں ہوتا؟

پانی میں تیل حل کیوں نہیں ہوتا؟

بچو! آپ نے مشاہدہ کیا ہوگا کہ پانی میں نمک‘شکر اور دیگر نمکیات حل ہوتے ہیں مگر پانی میں اگر تیل ملایا جائے تو یہ حل ہونے کے بجائے پانی پر تیرتا ہے کیوں ؟ پانی میں تیل یا چکنائی حل نہ ہونے کا سبب آج آپ کو بتاتے ہیں۔قطبی نظام کا ایک عجیب اُصول ہے جو پانی اور تیل کو آپس میں نہیں ملاتا ہے یا تیل کو پانی میں حل ہونے نہیں دیتا۔ہر مادہ کے سالمات ہوتے ہیں۔
سالمہ کسے کہتے ہیں؟ کسی بھی مادہ کے سب سے چھوٹے ترین حصہ کو سالمہ کہتے ہیں جو آزادانہ طور پر اپنا وجود رکھتا ہے اور وہ اصل مادہ کی خصوصیت بھی رکھتا ہے۔ تمام سالمات منفی اور مثبت برقی بار رکھتے ہیں جو سالمات کی طوالت پر یکساں یا غیر یکساں طور پر تقسیم ہوتا ہے قطبی مرکبات میں منفی اور مثبت بار سالمات کے دونوں سروں پر مرتکز ہوتے ہیں۔ ان مرکبات اور مادوں کو آپس میں ملانے سے ان کے منفی اور مثبت بار کے سالمات کے سرے‘ایک دوسرے کو اپنی طرف کھینچتے ہیں۔اس نتیجہ میں خالص محلول مل جاتا ہے۔ پانی قطبی مادہ ہے اور وہ دوسرے قطبی مادوں کے ساتھ آسانی سے مل جاتا ہے۔ اس کے بر خلاف تیل غیر قطبی مادہ ہے یعنی ان کے قطب نہیں ہوتے جب قطبی اور غیر قطبی کی کشش غیر قطبی مادوں کو علیحدہ اور قطبی مادوں کو یکجا کردیتی ہے تیل غیر قطبی مادہ ہے اسلئے پانی کے سالمات‘تیل کے سالمات آپس میں نہیں ملتے۔یہی وجہ ہے کہ تیل‘پانی میں حل نہیں ہوتا بلکہ یہ پانی کی سطح پر تیرتا رہتا ہے۔

Comments

comments